اردوئے معلیٰ

ہے بے مثال شہا ذاتِ عبقری تیری

ہے کس کا منہ جو کرے کوئی ہمسری تیری

 

محیطِ ہر دوجہاں جلوہ گستری تیری

خوشا نصیب! دو عالم کی سروری تیری

 

کسے نصیب ہو شانِ تونگری تیری

شہنشہی میں بھی چمکی قلندری تیری

 

سیاہ گیسو ہیں آنکھیں ہیں مدھ بھری تیری

دلوں کو سب کے لبھائے سمن بری تیری

 

نگاہِ شوق جو پڑ جائے سرسری تیری

دلِ عمرؓ میں سما جائے دلبری تیری

 

جو رنگ لائے کہیں بندہ پروری تیری

خدا بھی فضل سے امت کرے بری تیری

 

ق

 

نصیب حضرتِ صدیقؓ یاوری تیری

ملی عمرؓ کو خوشا عدل گستری تیری

 

حیا کی دولتِ وافر نصیبِ ذوالنورینؓ

علیؓ کے حصے میں آئی ہے صفدری تیری

 

ترا کلام ہے وحی خدا سے سب ماخوذ

سخن بلیغ ہے باتیں ہیں سب کھری تیری

 

خدا نے تیرے لئے عہدِ انبیاء لے کر

دیا ثبوت کے سب پر ہے برتری تیری

 

عدو بھی مان گئے زور آزما ہو کر

سپہ گری ہے تری زور آوری تیری

 

نظرؔ کرشمۂ توصیفِ مجتبیٰ ہے یہ

ہر انجمن میں ہے چمکی سخن وری تیری

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ