’’ہے تم سے عالم پُر ضیا ماہِ عجم مہرِ عرب‘‘

 

’’ہے تم سے عالم پُر ضیا ماہِ عجم مہرِ عرب‘‘

اے میرے حُسنِ والضحیٰ ماہِ عجم مہرِ عرب

ہے دل مرا ظلمت زدا ماہِ عجم مہرِ عرب

’’دے دو مرے دل کو جِلا ماہِ عجم مہرِ عرب‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ