ہے مہینہ برکتوں کا ، رحمتوں کا ، نعمتوں کا

 

ہے مہینہ برکتوں کا ، رحمتوں کا ، نعمتوں کا

بانٹنے رب کے خزانے آ گیا ہے ماہِ رمضاں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

لے کے یادوں کے آج نذرانے
اُن کی ہر بات ہدایت سے جُڑی ہوتی ہے
دل سے نکلے گی نہ مر کر بھی وطن کی اُلفت
ہوجائے میری حاضری طیبہ نصیب سے
میں اپنے خواب کٹ کر جیوں تو مرے خدا
حبيب کبریا مجھکو مدینے میں بلا لیجیے
اے اہلِ وطن شام و سحر جاگتے رہنا
شرح مزمل ہیں طہٰ آپ ہیں
عورت کو اپنے جسم پہ مرضی تو مل گئی
شــیوہ عـــفو ہــو ، پیـــمانہ سالاری ہـــو

اشتہارات