اردوئے معلیٰ

Search

ہے نرالے جوش پر کچھ آج فیضانِ رسول

جھولیاں بھر بھر کر لے جائیں گدایانِ رسول

 

ہیں رموزِ کن فکان آئیںہ جن پر مو بمو

مرحبا کیا ہی حقیقت بیں ہیں چشمانِ رسول

 

ہیں ید اللہ فوق ایدیھم کے گجرے ہاتھ میں

ہیں مریدانِ خدا سارے مریدانِ رسول

 

روزِ محشر آفتاب حشر ہو جب شعلہ بار

سایہ افگن ہو سیہ کاروں پہ دامانِ رسول

 

سرنگوں ہو مہر گردون وہ ہے ان کی شمع بزم

رشک کھائیں عرش و کرسی وہ ہے ایوانِ رسول

 

خفتہ بختی طالع بیدار ہو جائے مری

خواب میں گر دیکھ پاؤں میں شبستانِ رسول

 

من رانی قد را الحق دیکھ لو اے زاہدو

ہے جمال ذات باری روئے تابانِ رسول

 

اعلیٰ حضرت سیدی احمد رضا کے فیض نے

کر دیا ہے مجھ کو نیر منقبت خوانِ رسول

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ