اردوئے معلیٰ

ہے گورِ غریباں میں وہی شمسؔ کا مدفن

ہے گورِ غریباں میں وہی شمسؔ کا مدفن

تربت جو کوئی دل کے دھڑکنے کی صدا دے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ