اردوئے معلیٰ

Search

یا رب تیرے محبوب کا جلوہ نظر آئے

اس نورِ مجسّم کا سراپا نظر آئے

 

اے کاش کبھی ایسا ہو کہ خواب میں میرے

ہوں جس کی غلامی میں وہ آقا نظر آئے

 

تا حشر میری قبر میں ہو جائے اُجالا

مرقد میں جو ان کا رُخِ زیبا نظر آئے

 

روشن رہیں آنکھیں یہ میری بعد فنا بھی

گر وقتِ نزع وہ شہِ والا نظر آئے

 

آؤ کہ شمع نعتوں کی ہر سمت جلائیں

ہر گوشۂ ہستی میں اُجالا نظر آئے

 

جس در کا بنایا ہے گدا مجھ کو الٰہی

اس در پہ کبھی کاش یہ منگتا نظر آئے

 

کعبہ اے ریاضؔ اس کو بنا لوں گا میں دل کا

گر نقش قدم مجھ کو تمہارا نظر آئے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ