اردوئے معلیٰ

Search

یا رب مرے حروف میں ایسا کمال ہو

ہر لفظ تیری حمد کا یوں بے مثال ہو

 

تیری ثنا کے موتی میں چن کر سمیٹ لوں

اور تیری یاد سے ہی مرا دل نہال ہو

 

گلشن مری حیات کا مہکا رہے سدا

موسم گلابِ سرخ کا ہر ڈال ڈال ہو

 

ہو جاؤں بندگی میں جو مشغول ہرگھڑی

خورشیدِ بخت کو نہ کبھی بھی زوال ہو

 

دل کی شبِ سیاہ میں ہو جائے روشنی

پھر چارسو نظر میں ترا ہی جمال ہو

 

مل جائے تیرا قرب ہے یہ آرزو مری

پھر ناز کو نہ غم ہو نہ کوئی ملال ہو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ