اردوئے معلیٰ

 

یا نبی دیکھا یہ رُتبہ آپ کی نعلین کا

عرش نے چوُما ہے تلوا آپ کی نعلی کا

 

آپ کے تلووؔں کی نرمی قلب پر محسوس کی

میں نے جب بھی نقش دیکھا آپ کی نعلین کا

 

حشر میں جب لوگ چُومیں آپ کی دستِ کرم

سب سے چھُپ کرلوں میں بوسہ آپ کی نعلین کا

 

روزِ محشر سر پر سورج جب سوا نیزے پہ ہو

ایک نیزے پر ہو سایہ آپ کی نعلین کا

 

آپ کی خدمت کا مجھ کو کاش مل جاتا شرف

باندھا ہاتھوں سے تسمہ آپ کی نعلین کا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات