یہ زرد شال میں لپٹی ہوئی حسیں لڑکی

یہ زرد شال میں لپٹی ہوئی حسیں لڑکی

ہمارے گاوں کا موسم اداس کر دے گی

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

فارس اک روز اسی عطر سے مہکے گا وہ شخص
ترے بغیر تو خود عید بھی خدا کی قسم
وہی ماتھا ، وہی آنکھیں ، وہی ہونٹ
ذرا سی دیر میں آنے کا کہہ گیا تھا کوئی
ہوا یقیں کہ زمیں پر ہے آج چاند گہن
میں اس کی قید سے آزاد کہاں ہوں
کیوں تمہیں کہتے نہیں جاؤ مناؤ بھی اسے
جس وچ اک اک ساہ لگ جاوے
تمام ہو گئے ہم پہلی ہی نگاہ میں حیف
فضا اداس ہے رت مضمحل ہے میں چپ ہوں

اشتہارات