اردوئے معلیٰ

یہ سحر کبھی تو ٹوٹے گا ، یہ خبط کبھی تو پُھوٹے گا

یہ سحر کبھی تو ٹوٹے گا ، یہ خبط کبھی تو پُھوٹے گا

یہ سناٹا ، یہ خاموشی ، مجبورِ فغاں ہو جائے گی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ