اردوئے معلیٰ

Search

ہوں آج محوِ ثنائے رسولِ زریں تاج

رگوں میں فرطِ مسرت سے ہے لہو موّاج

 

کیا ثبوت فراہم زہے شبِ معراج

خدا کے سارے رسولوں کا مصطفیٰ سرتاج

 

صفِ رسل میں وہی ایک ہے شہِ لولاک

رسائے عرشِ معلّیٰ وہ صاحبِ معراج

 

کتاب اس کی ہے محکم خلل سے ہے محفوظ

جو صدیوں پہلے تھی ویسی ہی حرف حرف ہے آج

 

درِ حبیبِ خدا ہے یہاں کمی کیا ہے

ہر ایک وقت کھڑے ہیں ہزارہا محتاج

 

شرف ملا یہ انہیں آپ ہی کی نسبت سے

کہ مؤمنین کی مائیں ہیں آپ کی ازواج

 

مثالِ سایہ رہے ساتھ تیرے جو تا عمر

بفضلِ رب وہ ترے پاس ہی ہیں دونوں آج

 

نظامِ دینِ شہِ انس و جاں ہے مستحکم

نظامِ قیصر و کسریٰ نہیں کہ ہو تاراج

 

وہ عاصیوں کی شفاعت کریں گے روزِ حساب

وہ لاج والے ہیں رکھیں گے امتی کی لاج

 

مجھے تو چاہئے سرمایۂ سخن تیرا

مری نظرؔ میں ہے اک اک سخن ترا پکھراج

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ