اردوئے معلیٰ

مالک ترا کیا جاتا

مجھے پیڑ بنا دیتا

احساس نہ دیتا تو

کوئی چڑیا بنا دیتا

کوئی بھیڑ بنا دیتا

نہ درد پتہ ہوتا

نہ عشق عطا ہوتا

نہ شوقِ وفا ہوتا

نہ جرمِ خطا ہوتا

بے جان میں ہوتی تو

نہ شعر و بیاں ہوتا

نہ حرفِ زیاں ہوتا

بے شک مجھے تنکے سے

کمزور بنا دیتا

عورت نہ بناتا بس

کچھ اور بنا دیتا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات