حمد و نعت

حمد و نعت کی تاریخ

گوکہ یہ کہنا مشکل ہے کہ نعت خوانی کا آغاز کب ہوا تھا لیکن روایات سے پتا چلتا ہے حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے چچا ابوطالب نے پہلے پہل نعت کہی۔ رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی پیدائش سے پہلے "تبان اسعد ابو کلیکرب” اور "ورقہ بن نوفل” بھی نے رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ سلم کی شان میں نعت کہی  اردو کے مشہور نعت گو شاعر فصیح الدین سہروردی کے مطابق اولین نعت گو شعرا میں حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے چچا ابوطالب اور اصحاب میں حسان بن ثابت پہلے نعت گو شاعر اور نعت خواں تھے۔ اسی بنا پر اُنہیں شاعرِ دربارِ رسالت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم بھی کہا جاتا ہے۔

اس کے علاوہ کعب بن زہیر اورعبداللہ ابن رواحہ نے ترنم سے نعتیں پڑھیں۔ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے خود کئی مرتبہ حسان بن ثابت سے نعت سماعت فرمائی۔ حسان بن ثابت کے علاوہ بھی ایک طویل فہرست ہے، اُن صحابہء کرام کی کہ جنھوں نے حضور پاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی نعتیں لکھیں اور پڑھیں۔ جب حضور پاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم مکے سے ہجرت فرما کر مدینے تشریف لائے تو آپ کے استقبال میں انصار کی بچیوں نے دف پر نعت پڑھی۔

درج ذیل نام اُن صحابہ کرام کے ہیں، جنہیں نہ صرف حضورپاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی نعت پڑھنے کا شرف حاصل ہوا بلکہ کئی روایات سے یہ ثابت ہے کہ حضورپاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے خود کئی بار ان اصحاب سے نعت سماعت فرمائی

حضورپاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی ذات رحمت للعالمین ہے، آپ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم تمام جہانوں کے لیے رحمت بن کر تشریف لائے۔ آپ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت و ثناء خوانی جہاں مسلمانوں کا شعار رہی ہے، وہیں کچھ ایسے غیر مسلم شعرا بھی ہیں جنھوں نے آپ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان میں بہت عمدہ نعتیہ کلام لکھے۔ خصوصاً بھارتی شاعر کنور مہندر سنگھ بیدی سحر نے اس سلسلے میں لافانی اشعار حضور پاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان میں کہے، جو بہت پسند کیے گئے اور اکثر ان کے ان اشعار کا حوالہ دیا جاتا ہے۔

نعت کی تعریف ، اقسام ، آدابِ نعت اور لوازمات پہ ڈاکٹر شاہد مسعود کا آرٹیکل/ای بک پڑھنے کے لیے نیچے تصویر پہ کلک کریں۔ نعت کی تعریف

اردوئے معلیٰ یونیکوڈ حمد و نعت کا سب سے بڑا ذخیرہ

اردوئے معلیٰ پہ اس وقت تک الحمد للہ 600 سے زائد حمدِ باری تعالیٰ یونیکوڈ کی صورت میں محفوظ کی جا چکی ہیں جن مین کلاسیکل شعرا ، امام احمد رضا خان ، پیر سید نصیر الدین شاہ ، مظفر وارثی اور عبد الحمید صدیقی نظر لکھنوی وغیرہ سے لے کر دورِ حاضر کے معروف تقدیس خواں حضرات کے کلام شامل ہیں ۔ اس پہ مزید کام جاری ہے ۔ 
اردوئے معلیٰ پہ اب تک الحمد للہ کم و بیش 3000 کے قریب نعتِ رسولِ مقبول یونیکوڈ کی شکل میں محفوظ کی جا چکی ہیں ۔ کلاسیکل شعرا میں امام احمد رضا خان ، پیر سید نصیر الدین شاہ ، مظفر وارثی اور عبد الحمید صدیقی نظر لکھنوی جیسے مستند شعرائے کرام کا کلام شائع کیا گیا ہے ۔ بالکل اسی طرح دورِ حاضر کے معروف تقدیس خواں حضرات جن میں مقصود علی شاہ ، شیخ صدیق ظفر ، اشفاق احمد غوری ، صبیح رحمانی ، محمد حسین مشاہد رضوی، جاوید عادل سوہاوی ، محمد احمد زاہد ، ڈاکٹر محمد شرف الدین ساحل ، مرتضیٰ اشعر اور جہانداد منظر القادری وغیرہ کے کلام کو شائع کیا جا چکا ہے ۔  
اردوئے معلیٰ پہ اس وقت تک جن تقدیس خواں صاحبان کا کلام شائع ہو چکا ہے ان میں مولانا حسن رضا بریلوی ، سعادت حسن آس ، صبیح رحمانی ، اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان بریلوی ، شیخ صدیق ظفر ، مصطفیٰ رضا خان نوری ، محمد عبد الحمید صدیقی نظر لکھنوی ، صبیح رحمانی ، مقصود علی شاہ ، گل بخشالوی ، محمد احمد زاہد ، محمد مسعود اختر  ، جاوید عادل سوہاوی ، غلام ربانی فدا ، ڈاکٹر محمد شرف الدین ساحل ، اشفاق احمد غوری اور مرتضٰی اشعر شامل ہیں ۔ 

حمد و نعت کے زمرہ جات

معروف تقدیس خواں اور ان کا تعارف

تقدیس خواں شعرائے کرام کی فہرست

130764095_1307844366259202_8317534511330147622_n

دادا محسن بن نور جو کہ فی الحال سعودی عرب میں مقیم ہیں ، بڑی محنت اور لگن سے اردوئے معلیٰ پہ حمد و نعت کا کام تین سال سے جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ اس عرصہ میں انہوں نے اپنی جانفشانی اور لگن سے تین ہزار سے زائد یونیکوڈ حمد و نعت کا سنگِ میل بھی عبور کیا ۔ نعت گو شعراء حضرات اپنا کلام شائع کروانے کے لیے دادا محسن بن نور سے رابطہ کریں ۔ فون نمبر اور ای میل دیے جا رہے ہیں ۔ 923008888829+