اردوئے معلیٰ

آپ آئے ہیں تو محفل پہ شباب آیا ہے

 

آپ آئے ہیں تو محفل پہ شباب آیا ہے

بزم ہستی کا ہوا حسن نمایاں تجھ سے

 

سر بلند اور ہوا دہر میں آدم کا وقار

ارجمند اور ہوئی عظمت انساں تجھ سے

 

وہ تگ و تاز کہ دی تیزی دوراں کو شکست

وہ تب و تاب کہ سایہ تھا گریزاں تجھ سے

 

خفت عجز سے کفر اور نگوں سار ہوا

استوار اور ہوئی سطوط ایماں تجھ سے

 

تجھ سے تاریک فضاوں کو ملی کسو ت نور

عظمت شام بنی صبح درخشاں تجھ سے

 

شور اٹھا کے غریبوں کے مددگار آئے

دردمندوں کو ملا درد کا در ماں تجھ سے

 

اہل زر کو ہوا احساس فرد مائیگی کا

ایسے پرمایہ ہوا ہر تہی داماں تجھ سے

 

وسعت جود و سخا دیکھ کے تیرا سائل

تھا وہ تنگ ظرفئی دامن پہ پشیماں تجھ سے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ