اردوئے معلیٰ

Search

اجرتِ آبلہ پائی بھی نہ دے گا سورج

ہمسفر بن کے اگر ساتھ چلے گا سورج

 

دن نکلنے کا کرشمہ نہ سمجھنا آسان

اَن گنت ٹوٹیں گے تارے تو بنے گا سورج

 

سائباں جیسا بھی سر پر ہے غنیمت ہے بہت

سر اٹھاؤ گے تو آنکھوں میں چُبھے گا سورج

 

اپنی تابش پہ جنہیں ناز ہے اُن سے کہہ دو

شام جب ہو گی تو اُن پر بھی ڈھلے گا سورج

 

سائے کی چاہ میں یوں راہ بدلنے والو!

تم جہاں جا ؤ گے سر پر ہی رہے گا سورج

 

روشنی میں ہے بڑا ظرف، نہ پچھتاؤ ظہیرؔ

سینہ کھولو گے تو پھر آن بسے گا سورج

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ