اردوئے معلیٰ

ادھر ادھر تو کئی راستے بنے ہوئے ہیں

جو آپ کے ہیں وہ بس آپ کے بنے ہوئے ہیں

 

خدا کی دین ہے ہاتھوں پہ کس کے کیا لکھ دے

کہیں لکیریں کہیں قافلے بنے ہوئے ہیں

 

دکھائی دیتا ہے شفاف ان میں عشق رسول

ہمارے چہروں پہ جو آئنے بنے ہوئے ہیں

 

یہاں پہ حکم ہے آوازیں پست رکھنے کا

نبی سے عشق کے سب قاعدے بنے ہوئے ہیں

 

اگر پکار لیں وہ تو یہ دو قدم بھی نہیں

ہزاروں میل کے جو فاصلے بنے ہوئے ہیں

 

فروزاں رہتا ہے ان میں چراغ حب نبی

ہمارے سینوں میں جو طاقچے بنے ہوئے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات