اس طرح سے زندگی نے دیا ہے ہمارا ساتھ

اس طرح زندگی نے دیا ہے ہمارا ساتھ

جیسے کوئی نباہ رہا ہو رقیب سے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میرے حِصّے میں نہ آئے ھُوئے پانی ! تری خیر
میں ایسا پیڑ ہوں جس کی تمام شاخوں پر
زمانے بعد اُسے پڑھ کے مسکرا رہا ہوں
پیار کی باتیں کیجیے صاحب
مرے ناشاد رہنے سے اگر تجھ کو مسرت ہے
کچھ تو رہے اسلاف کی تہذیب کی خوشبو
اس زندگی میں اتنی فراغت کسے نصیب
میرے ہاتھ میں کوڑا ہے میں کھال ادھیڑ بھی سکتی ہوں
میں جس ارادے سے جارہی ہوں اسی ارادے سے لڑ پڑوں گی
گرد شہرت کو بھی دامن سے لپٹنے نہ دیا

اشتہارات