الہیٰ ! جب سے تجھ سے رابطہ ہے

الہیٰ ! جب سے تجھ سے رابطہ ہے

سکوں قلب و نظر کو مل گیا ہے

 

مرا ایماں ہے ، تُو واحد ہے یا رب

نبی تیرا محمد مصطفےٰ ہے

 

شفیع المذنبیں تیرا نبی ہے

خطا کاروں کو مژدہ جاںفزا ہے

 

تُو ہی معبود ہے ، مسجود ہے تُو

تُو ہی خالق ہے ، مالک ہے ، خدا ہے

 

عبادت ہے تری مقصود اپنا

تُو ہی ہے مبتدا ، تُو منتہا ہے

 

خدا کو ایک مانو ، شرک چھوڑو

یہی تیرے محمد نے کہا ہے

 

تجھی سے حاجتیں سب مانگتے ہیں

تُو ہی مشکل کشا ، حاجت روا ہے

 

چلا اُس راستے پر جو ہے سیدھا

جو تیرے مصطفےٰ کا راستہ ہے

 

از آدم تا محمد اس جہاں میں

ترے لطف و کرم کا سلسلہ ہے

 

میسّر ہو شفاعت مصطفےٰ کی

ترے دانش کی اتنی التجا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

یارب ہے بخش دینا بندے کو کام تیرا
جو جسم و جاں کے ساتھ ہے شہ رگ کے پاس ہے
حمد ہے بے حد مرے پروردگار
ہے حسن زندگی کا، حسن کلام تیرا
وہ یکتا منفرد سب سے جدا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے
خدا ہم ورد و مُونس ہے، شفیق و مہرباں ہے
خدا کی مہرباں ہے ذات لکھوں
خدا مونس، شفیق و مہرباں ہے
کرو مخلوق کی خدمت، یہی خالق کا فرماں ہے
محبت کی صدا ہے اِسمِ اعظم