اردوئے معلیٰ

Search

ان کا غلام ہوں میں یہ اعزاز کم نہیں ہے

آقا کا میرے مجھ پر کس دم کرم نہیں ہے

 

گلہائے رنگ و بو سے آراستہ ہے ایسا

طیبہ کا گلستاں بھی جنت سے کم نہیں ہے

 

بزمِ خیال میں بس وہ ہی بسے ہوئے ہیں

کب یاد ان کی دل میں اب دمبدم نہیں ہے

 

یادِ نبی میں آنسو رہ رہ کے بہہ رہے ہیں

کب دل حزیں نہیں ہے کب چشم نم نہیں ہے

 

کیوں ہو فداؔ نہ شاداں بابِ نبی میں آ کر

کیا گلشنِ مدینہ باغِ ارم نہیں ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ