اردوئے معلیٰ

Search

اولیں صفتِ صناع ، رسولِ قرشی

ہے جو مکی ، مدنی ، ہاشمی و مطلبی

 

جس کا دین پیکرِ ہستی کی حیاتِ نو ہے

جس کے آئیں میں برابر عربی و حبشی

 

جس پر نازل کیا قرآنِ مبیں خالق نے

اس سے انکار جو کرتا ہے ، وہ ہے بولہبی

 

مثل اُس کا نہ سرِ عرش ، نہ بالائے زمیں

ہے وہی بعدِ خدائے عبدی و ازلی

 

اے کہ از طٰہ و یٰسیں بتو حق کرد خطاب

دل و جاں بعد فدایت کے عجب خوش لقبی

 

انچہ تو کرد نہ کردند رسولانِ کبار

مرحبا ! سیدِ مکی ، مدنی العربی

 

تجھ کو خود حق نے بنایا ہے وسیلہ اپنا

تجھ سے اس وجہ سے ہم کرتے ہیں حاجت طلبی

 

شمسؔ پر بھی نظرِ لطف و کرم ہو جائے

تیری ہی خاکِ درِ پاک سے ہے وہ نسبی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ