اُنؐ کا ہے کرم صبح و مسا دیکھ رہا ہوں

اُنؐ کا ہے کرم صبح و مسا دیکھ رہا ہوں

ہر وقت مدینے کی فضا دیکھ رہا ہوں

اِک ذرۂ ناچیز پہ یہ اُنؐ کا کرم ہے

میں کیا ہوں ظفرؔ اور میں کیا دیکھ رہا ہوں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

آتے رہے انبیا کَمَا قِیلَ لَھُم
محمدؐ نام میں وہ نور لائے
نبیؐ کے آستاں سے رب ملا ہے
آپؐ کی نعت ہی کہوں آقاؐ
مرے محبوب محبوبِ خدا ہیں
ہے اُمت آپؐ کی خوار و زبوں و منتشر آقاؐ
درِسرکارؐ پر ہر دم گھٹا رحمت کی چھائی ہے
مجھے عزمِ سفر دے دے خُدایا
’’کلکِ رضاؔ ہے خنجرِ خوں خوار برق بار‘‘
’’سرشار مجھے کر دے اک جامِ لبالب سے‘‘