اردوئے معلیٰ

Search

اُن کی سیرت سے آگہی ہو گی

دل کی دنیا میں روشنی ہو گی

 

دل کا دامن درود سے بھرلو

وادیِ جاں ہری بھری ہو گی

 

ربط قائم رہے درودوں سے

ان کی ہر لمحہ رہبری ہو گی

 

پہلے اُن کو بنا حبیب اپنا

پھر تری رب سے دوستی ہو گی

 

باثمر جو ملے گا اُس در کا

اُس کے اندر تو عاجزی ہو گی

 

انکی عظمت اگر نہ مانے کوئی

انکی عظمت میں کیا کمی ہو گی

 

فکر بس اُن کو ہے وہاں تیرا

اپنی اپنی جہاں پڑی ہو گی

 

رب کی رحمت شکیلؔ برسے گی

جہاں سنت کی پیروی ہو گی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ