اردوئے معلیٰ

اُن کے دربار میں پانے کے لئے آیا ہوں

اپنی تقدیر بنانے کے لئے آیا ہوں

 

وہی رودادِ غمِ عشق سنیں گے میری

اپنی روداد سنانے کے لئے آیا ہوں

 

ہے یقیں تشنگیٔ شوق بجھے گی تو یہیں

پیاس میں دل کی بجھانے کے لئے آیا ہوں

 

سربلندی مجھے ملنی ہے یہیں ملنی ہے

اپنی پیشانی جُھکانے کے لئے آیا ہوں

 

ضبط کرنے کی تو عادت ہی رہی ہے لیکن

حالِ دل اُن کو بتانے کے لئے آیا ہوں

 

صرف اپنے لئے آنا تو نہیں تھا مجھ کو

میں یہاں سارے زمانے کے لئے آیا ہوں

 

اُن کےقدموں میں ہی رہ جاؤں اگر وہ رکھ لیں

لوٹ کر پھر نہیں جانے کے لئے آیا ہوں

 

اپنے والد کی نصیحت پہ عمل کرنا ہے

ربط آقا سے بڑھانے کے لئے آیا ہوں

 

مجھ کو عارف اِسی مٹی میں فنا ہونا ہے

آخری اپنے ٹھکانے کے لئے آیا ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات