اردوئے معلیٰ

Search

اُٹھاؤں دمِ جوشِ اُلفت قلم

کروں نعتِ شاہِ مدینہ رقم

 

وہ اشعار پیدا کروں دلنشیں

کہیں سُن کے روح الامیں آفریں

 

رسولِ اولوالعزم گیتی سناں

فرستادۂ خُسروِ خسرواں

 

ضلالت نہ باقی رہی نام کو

نکالا خدائی سے اصنام کو

 

کبھی موجِ کوثر بنی اُنگلیاں

ہوئے آبِ شیریں کے چشمے رواں

 

درختوں نے آ کر کبھی پیشِ پا

گواہی نبوت کی دی برملا

 

کبھی کچھ لعابِ دہن ڈال کر

کیا چاہِ شورابہ رشکِ شکر

 

غرض اُن کے اعجاز کیا ہوں بیاں

زبانِ قلم میں یہ قدرت کہاں

 

جگر کاوشِ فکر سے خوں کروں

رقم رشک یاقوت مضموں کروں

 

محمد ہیں سردار کونین کے

محمد ہیں سالار دارین کے

 

کیا اس طرح منصبی فرض ادا

کہ بول اٹھے روح الامیں مرحبا !

 

ہزاروں کیے معجزے آشکار

کہ مشکل ہے جن کا بیان و شمار

 

نہ انسان لب تشنہ آیا نظر

نہ پیاسا کسی کا رہا جانور

 

کبھی سنگِ رہ بے زبان دہن

ہوئے آپ سے برملا ہم سخن

 

کبھی شق کیا آپ نے ماہ کو

دیا داغ کُفارِ گمراہ کو

 

بشر کیا کہے آپ کی شان میں

خدا خود ہے وصاف قرآن میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ