اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

آؤ ماتم کریں اُداسی کا

شہر، گلیاں، نگر، تمام اُداس
چاند، تارے اُداس، شام اُداس
صبح سے شام کا نظام اُداس
تیرا وہ آخری سلام اُداس
کیا تغیّر ہے تیرے جانے سے
شہر بھر کاٹنے کو دوڑتا ہے
ہر گلی اُنگلیاں اُٹھاتی ہے
میں نے سوچا کبھی نہ تھا لیکن
اَب تِری یاد بھی ستاتی ہے
پھر تِری یاد گھیر کر مجھ کو
میری غزلیں مجھے سُناتی ہے
کوئی چارہ ہو غم شناسی کا
حل نکالو نا روح پیاسی کا
یہ بھی ہاڑا ہے دیوداسی کا
’’آؤ ماتم کریں اُداسی کا‘‘
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

فیکون
فروغ فرخ زاد کے نام
مسلم سربراہ کانفرنس
عشق
لوکاں دا کیہ دوش وے بیبا
رُک ہی جاتی کہیں ہَوا، لیکن!
یہی دعا ہے رہیں سبز ہی ترے موسم
سانولی
جانے کیوں؟
معذرت