آپ آئے سب پہ رحمت ہو گئی

آپ آئے سب پہ رحمت ہو گئی

شامِ ظلمت صبحِ طلعت ہو گئی

 

آپ کی مسکان سے یاسیّدی

ساری دنیا خوبصورت ہو گئی

 

عظمتیں ہی عظمتیں اُن کے لیے

آپ سے جن کو محبت ہو گئی

 

آپ کی نعلینِ اقدس کے طفیل

سرزمینِ طیبہ جنت ہو گئی

 

شاہِ بطحا کی عنایت دیکھئے

نعت کہنا میری قسمت ہو گئی

 

دَھن لٹایا آپ کے جب نام پر

رزق میں میرے بھی برکت ہو گئی

 

شافعء محشر کے آنے سے رضاؔ

نار سے بچنے کی صورت ہو گئی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

مری جاں سے قریں میرا خُدا ہے
دل کہاں ضبط میں ہے،آنکھ کہاں ہوش میں ہے
بھیک ہر ایک کو سرکار سے دی جاتی ہے
شاہا ! سُخن کو نکہتِ کوئے جناں میں رکھ
اور کیا چاہیے بندے کو عنایات کے بعد
محظوظ ہو رہے ہیں وہ کیفِ طہور سے
عدن بنا گیا مسجد کو اپنے سجدوں سے
ہر لفظ حاضری کا سوالی ہے نعت میں
کر کے رب کی بندگی خاموش رہ
یہ لبوں کی تھرتھراہٹ یہ جو دل کی بے کلی ہے

اشتہارات