اکرم و اطہر اسمِ محمد

اکرم و اطہر اسمِ محمد

دہر کا سرور اسمِ محمد

 

ہادی اور سردار وہی ہے

اعلٰی اور سرکار وہی ہے

اور ہم کو درکار وہی ہے

 

رحم کا محور اسمِ محمد

دہر کا سرور اسمِ محمد

 

رحم کا ہر گُل اس سے مہکا

درد کے مارے ہُوؤں کا ماوا

حامیء عامی کملی والا

 

حلم سراسر اسمِ محمد

دہر کا سرور اسمِ محمد

 

اس کا سائل سارا عالم

وہ اعلٰی اور وہی مکرّم

کامل و اکمل عالی مکارم

 

علم کا مصدر اسمِ محمد

دہر کا سرور اسمِ محمد

 

لمحہ لمحہ اس کی عطا ہے

عالم اس سے ہی مہکا ہے

سارے رسولوں سے اعلیٰ ہے

 

رحم کا ساگر اسمِ محمد

دہر کا سرور اسمِ محمد

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ