اردوئے معلیٰ

اک تجلّی تری گماں میں ہے

جلوہ تیرا ہر اک زباں میں ہے

 

سب ترے ہی وجود کے باعث

جتنا کچھ بھی مرے مکاں میں ہے

 

جس کو پی کر سنبھل گیا انساں

مے وہ بس تیری ہی دکاں میں ہے

 

با مسمّیٰ محمّد اسم ترا

تجھ سا کوئی نہیں جہاں میں ہے

 

جس سے دنیا بدل گئی یک لخت

سوز وہ تیرے ہی فغاں میں ہے

 

میں محمّد کی مدح کر پاؤں

یہ بھلا کب مرے گماں میں ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات