اردوئے معلیٰ

اگرچہ بزم میں بالکل سمٹ کے ملتا ہے

مگر وہ تنہا ملے تو لپٹ کے ملتا ہے

 

بدن وصال کا خواہاں ، دماغ ضبط میں گُم

عجیب شخص ہے ٹکڑوں میں بَٹ کے ملتا ہے

 

یہ بازگشت کا احسان ہے کہ لوٹ آئی

وگرنہ کون کسی سے پلٹ کے ملتا ہے

 

غمِ جہاں ہے غمِ یار سے بہت پہلے

مگر جو لُطف یہ ترتیب اُلٹ کے ملتا ہے

 

اُسے خبر ہے کہ رسوائیاں بھی ہوں گی مگر

بڑا دلیر ہے وہ شخص ، ڈَٹ کے ملتا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات