اردوئے معلیٰ

Search

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

دو جہاں کے تاجدار مرحبا

 

اے رسولِ ہاشمی خوش آمدید

دو جہاں کی زندگی خوش آمدید

اے حبیبِ کردگار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

جشن میں زمین آسمان ہے

دشت میں بہار کا گمان ہے

ہے فضا بھی مشکبار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

آپ اگر ذرا سا مسکرائیں گے

رنج و غم سبھی کو بھول جائیں گے

غم زدوں کے غمگسار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

ابرِ غم تھا دل کے آسمان پر

بے قراری منجمد تھی جان پر

آپ نے دیا قرار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

ہم گرے تو آپ ہی اٹھائیں گے

اپنے رَبّ سے ہم کو بخشوائیں گے

شافعِ روزِ شمار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

دن ہو یا ہو رات کا کوئی پہر

شام ہو یا سر ُابھارتی سحر

اہلِ عشق کی پکار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

جب بھی چاہو آفتاب موڑ دو

جب بھی چاہو ماہتاب توڑ دو

آپ کو ہے اختیار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

آپ کی ولادتِ سعید پر

ایک ہی صدا ہے جشنِ عید پر

ہم کہیں گے بار بار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

 

ہے عروج و اوج اشتیاق پر

در کرم کا وا کرو اشفاقؔ پر

دل ہے محوِ انتظار مرحبا

اے رسولِ ذی وقار مرحبا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ