اردوئے معلیٰ

بجلی چمکے ، بادل گرجے ، چھم چھم چھم برسات ہوئی

بجلی چمکے ، بادل گرجے ، چھم چھم چھم برسات ہوئی

دل کی دھرتی اب بھی پیاسی ، جانے یہ کیا بات ہوئی

روز و شب کے کوہ تراشیں ، روز کا یہ معمول ہوا

مر مر کر اب صبح کریں گے ، تڑپ تڑپ کر رات ہوئی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ