اردوئے معلیٰ

Search

بس گئے باغِ تسلی میں بڑے چین کے ساتھ

جن کو بھی عشق ہوا سرورِ کونین کے ساتھ

 

عذر مطلوب ہے جبریل کو جس جا کے لئے

خاک جاتی ہے وہاں آپ کے نعلین کے ساتھ

 

عاجزی کو وہ فرازی ہے درِ اقدس پر

سر جو خم ہوتا ہے جا لگتا ہے قوسین کے ساتھ

 

آپ کے ذکر سے ہے اس کی روانی میں جمال

جس یمِ غم کو علاقہ ہے مرے نین کے ساتھ

 

دل مکمل ہے ترے عشق میں اس جا پہ نہیں

شین اور قاف جہاں ہوتے نہیں عین کے ساتھ

 

چاندنی رات ہے اور لب پہ مرے نعتِ حضور

بھور کو عشق تو ہونا ہے مری رَین کے ساتھ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ