بشر کوئی نہیں خیر البشرؐ سا

بشر کوئی نہیں خیر البشرؐ سا

غلامِ کم تریں منصب ہے میرا

ظفرؔ درباں بنا کے اپنے در کا

مجھے سرکارؐ نے اعزاز بخشا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

رات بیدار ہے کونین کی آنکھیں روشن
بدکار ہیں عاصی ہیں زیاں کار ہیں ہم
شعورِ نعت دیں جذبات دے دیں
آپؐ ہیں صادق و امیں آقاؐ
آپؐ ہی خیر البشرؐ ہیں آپؐ ہی نُورمبیں
خدا کی کبریائی ہے جہاں تک
میں اِک بھُوکا تھا پیاسا تھا مُسافر
کیا مجھ سے واعظ نے ذکرِ مدینہ
’’ترے غلاموں کا نقشِ قدم ہے راہِ خدا‘‘
’’قبر کا ہر ذرّہ اک خورشیدِ تاباں ہو ابھی ‘‘

اشتہارات