اردوئے معلیٰ

بچھا ہے ہر طرف خوانِ محمّد

جہاں سارا ہے مہمانِ محمّد

 

مُحافِظ جب ہے رحمانِ محمّد

مُحرَّف کیوں ہو قرآنِ محمّد

 

مرادوں کی ابھی کھل جائیں گرہیں

مدد کر ! زلفِ پیچانِ محمّد !

 

طریقت کیا ہے؟ حالِ مصطفائی

شریعت کیا ہے ؟ فرمانِ محمّد

 

ہے جن سے رات دن کو فیض حاصل

وہ زلف و رُوئے تابانِ محمّد

 

اٹھے گا نعت پڑھتا ان شاء اللہ

یہاں جو ہے ثنا خوانِ محمّد

 

ملائک در قیامت می تلاشند

مَنَم مَخفِیِّ دامانِ محمّد

 

نگہ کردم نہ سوئے حسنِ دنیا

معظّم ! مَن ،کہ مستانِ محمّد

 

کجا قطرہ کجا دریا معظمؔ !

کجا تو اور کجا شانِ محمّد

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔