’’بڑھے حوصلے دشمنوں کے گھٹا دے‘‘

 

’’بڑھے حوصلے دشمنوں کے گھٹا دے‘‘

اے بغداد والے تُو اُن کو مٹا دے

بڑھے جا رہے ہیں ستَم غوثِ اعظم

’’ذرا لے لے تیغِ دو دَم غوثِ اعظم‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ