اردوئے معلیٰ

Search

تقدیر سنور جائے سرکار کے قدموں میں

یہ جان اگر جائے سرکار کے قدموں میں

 

اک بار رکھوں اُن کے قدموں میں یہ سر اپنا

پھر عمر گذر جائے سرکار کے قدموں میں

 

یہ کیفؔ کی حسرت ہے ڈھل جائے وہ خوشبو میں

اور جا کے بکھر جائے سرکار کے قدموں میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ