تمام الجھنیں میں خال و خد میں رکھوں گی

تمام الجھنیں میں خال و خد میں رکھوں گی

تجھے بھی آئینے اب تیری حد میں رکھوں گی

میں عمر بھر نہیں تذلیل بھولتی اپنی

پلٹ کے آیا تو ٹھوکر کی زد میں رکھوں گی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

جو کچھ بھی میرے شعر ہیں بس میرے شعر ہیں
فرشتہ تو نہیں انسان ہوں میں
کرم فرما خدا کی ذاتِ باری
حرم کو جانے والو جا کے واں رب کو منالو
خدایا دے مجھے اپنا پتہ، پہچان دے دے
خدا کا ذکر میری زندگی ہے
ہر دم تری ہی یاد ہے تیری ہی جستجو
خدا کا مرتبہ واضح عیاں ہے
خدا سارے جہانوں کا خدا ہے
مآلِ ہجر کے فرقت کے مارو