اردوئے معلیٰ

Search

تمنا دل میں نہیں کچھ بھی ما سوا کے لیے

کہ اذنِ حاضری عاصی کو بھی عطا ہو جائے

 

شہہِ مدینہ کی جب اک نگاہ ہو جائے

غم زمانہ سے تو وارثیؔ رہا ہو جائے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ