تنہائیِ شب میں ترے ہونے کی تمنّا

تنہائیِ شب میں ترے ہونے کی تمنّا

روتے ہوئے بچے کو کھلونے کی تمنّا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میرے حِصّے میں نہ آئے ھُوئے پانی ! تری خیر
میں ایسا پیڑ ہوں جس کی تمام شاخوں پر
دل بھی اتنا ہی بڑا ہوتا ہے
میرا لہجہ دھیما ہے
‏ہونٹ ہو سکتے ہیں لہجہ تو نہیں ہو سکتا
بدن پر بار ہے پھولوں کا سایہ
آتشیں ہے لہجہ بھی گفتگو بھی بارودی سوچیے
غم بک رہے تھے میلے میں خوشیوں کے نام پر
مختصر سی زندگی میں کتنی نادانی کرے
میں آسمان پہ واپس نہ لوٹ آؤں ؟ خدا