تُو اگر وقت بن کے مل جاتا

تُو اگر وقت بن کے مل جاتا

ہم تجھے بھی گزار ہی دیتے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

جب پرانا لہجہ کھو دیتا ہے اپنی تازگی
اے میرے مصور نہیں یہ میں تو نہیں ہوں
ہم اہل ہجر کو لطف سحر نصیب کہاں
بھوک کو حاضر ناظر جان کے کہتی ہوں
کی لوکاں تے تھپنی مرضی
کیا خدائے سخن سزا دے گا ؟
میرا دامن سے لپٹنا آپ شاید بھول جائیں
ملا ہے کم یا زیادہ کہا ہے بسم اللہ
قرار دل کو سدا جس کے نام سے آیا
کتنے بھی ہوں خلیق و دل آویز و پُر تپاک