اردوئے معلیٰ

Search

ثمرۂ شوق نئے غنچوں میں رکھا جائے

شجرۂ نعت مری نسلوں میں رکھا جائے

 

میرے بچوں کو بھی ہو مدحِ نبی کی توفیق

نسل در نسل مجھے بردوں میں رکھا جائے

 

با ادب نعت کہیں نعت پڑھیں نعت سنیں

پاک لفظوں کو ادب لہجوں میں رکھا جائے

 

گر نہیں نعمتِ دیدار ابھی قسمت میں

یہ بھی کافی ہے مجھے منگتوں میں رکھا جائے

 

مثلِ خورشید سحر سیرتِ تاباں کا پیام

وادئ زیست کی شب راہوں میں رکھا جائے

 

تیری یادوں کے جلا کر شبِ فرقت میں چراغ

قریۂ جاں کے سبھی طاقوں میں رکھا جائے

 

مصحفِ نعت کا نوری یہ ادب ہے لازم

بغض و نفرت سے تہی سینوں میں رکھا جائے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ