’’جان ہے عشقِ مصطفا، روز فزوں کرے خدا‘‘

 

’’جان ہے عشقِ مصطفا، روز فزوں کرے خدا‘‘

لب پہ ہو ہر صبح و مسا، نغمۂ نعت ہی سجا

ہیں دردِ دل کی جو دوا، دل اُن کو بھول پائے کیوں

’’جس کو ہو درد کا مزا، نازِ دوا اُٹھائے کیوں ‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ