اردوئے معلیٰ

 

( طلوعِ آفتابِ ہدایت )

جب دشنہ دشنہ دشنہِ مژگانِ تیز تھا

جب شعلہ شعلہ شعلہِ برقِ ستیز تھا

 

جب خیمہ خیمہ خیمہِ مرگ و فساد تھا

جب قریہ قریہ قریہِ کفرو عناد تھا

 

جب فتنہ فتنہ فتنہِ شدادِ وقت تھا

جب نالہ نالہ نالہِ بیدادِ وقت تھا

 

جب عقدہ عقدہ عقدہِ تقصیرِ فہم تھا

جب حلقہ حلقہ حلقہِ زنجیرِ وہم تھا

 

جب گوشہ گوشہ گوشہِ صد انبساط تھا

جب بندہ بندہ بندہِ عیش و نشاط تھا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات