اردوئے معلیٰ

Search

جب گلشن حیات میں سرکار آ گئے

مہکی فضا ، شباب پہ گلزار آ گئے

 

نعت رسول پاک کا نغمہ جو چھڑ گیا

وجد و طرب میں ثابت و سیار آ گئے

 

اب دیکھنا یتیموں کے چہروں کی رونقیں

نادار و ناتواں کے طرفدار آ گئے

 

آمد سے ان کی دہر کا نقشہ بدل گیا

تاریکیاں ہیں ختم پہ ، انوار آ گئے

 

سرشاریاں ہیں رقص میں، خوش بختیاں نثار

شہر نبی میں طالب دیدار آ گئے

 

تم کو نبی کے عشق کی باتوں سے کیا غرض

تم بزم نعت پاک میں بے کار آ گئے

 

اے نورؔ ہر کمال ہے جن کے قدم کی دھول

وہ صاحب کمال و خوش اطوار آ گئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ