اردوئے معلیٰ

Search

جس کو شرف مآب کرے وصفِ پائے خاص

اس عام شخص کو بھی جہاں کیوں نہ پائے خاص

 

سنگِ درِ نبی پہ جو ہیں جبہہ سائے خاص

ان پر ہیں دو جہان میں رحمت کے سائے خاص

 

اترا تنِ اثیم سے خود جامۂِ خطا

آئے شفیع پہنے ہوئے جب قبائے خاص

 

جنت میں اہل نعت کا اکرام ہے جدا

ہوتا ہے اہتمام خصوصی برائے خاص

 

محشر کی بھیڑ میں نہ رکھیں کیوں الگ شناخت

اوڑھے ہوئے ہیں ان کے ثَنائی ردائے خاص

 

شانِ عروج حیطۂِ ادراک سے ورا

خارج حدودِ حرف سے ہے وہ لقائے خاص

 

محبوب رکھیے ویسے تو ہر نسبتِ حضور

لیکن نبی کی آل سے رکھیے ولائے خاص

 

ہر فرد کے یہ بس کی نہیں بات ، کیونکہ ہے

توفیقِ نعتِ سرورِ عالم عطائے خاص

 

وہ شے ثنائے شاہِ اخصُّ الخواص ہے

جو عام کمتریں کو معظمؔ بنائے خاص

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ