اردوئے معلیٰ

جو بھی مانگو وہ دیا کرتے ہیں

جو بھی مانگو وہ دیا کرتے ہیں

میرے آقا یہ عطا کرتے ہیں

 

میرے سرکار سراپا رحمت

حق میں دشمن کے دعا کرتے ہیں

 

جو ہیں ان کے وہ مصیبت میں سدا

یا محمد ہی رٹا کرتے ہیں

 

چاہتے ہیں جو بصد عجز سدا

ان سے ہم مانگ لیا کرتے ہیں

 

یہ بھی ہے لطف و کرم آقا کا

خواب میں درس دیا کرتے ہیں

 

یہ ہے سچ سرور و سلطانِ جہاں

میری فریاد سنا کرتے ہیں

 

وہ قدم چومتا ہوں میں اے فداؔ

سوئے طیبہ جو بڑھا کرتے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ