اردوئے معلیٰ

جینا بھی اک مشکل فن ہے سب کے بس کی بات نہیں

جینا بھی اک مشکل فن ہے سب کے بس کی بات نہیں

کچھ طوفان زمیں سے ہارے ، کچھ قطرے طوفان ہوئے

 

اپنا حال نہ دیکھیں کیسے ، صحرا بھی آئینہ ہے

ناحق ہم نے گھر کو چھوڑا ، ناحق ہم حیران ہوئے

 

دل کی ویرانی سے زیادہ مجھ کو ہے اس بات کا غم

تم نے وہ گھر کیسے لُوٹا جس گھر میں مہمان ہوئے

 

لوری گا کر جن کو سلاتی تھی دیوانے کی وحشت

وہ گھر تنہا جاگ رہے ہیں ، وہ کوچے ویران ہوئے

 

کتنا بے بس کر دیتی ہیں شہرت کی زنجیریں بھی

اب جو چاہے بات بنا لے ، ہم اتنے آسان ہوئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ