اردوئے معلیٰ

Search

 

حسن مطلق کے لیے ذاتِ گرامی چاہیے

طوفِ کعبہ میں بھی طیبہ کی سلامی چاہیے

 

مشکلیں خود مشکلوں میں مبتلا ہو جائیں گی

ہاں زبانِ دل سے وردِ نامِ نامی چاہیے

 

عرش کیا معراج کیا اور منزلِ قوسین کیا

اس سے بڑھ کر آپ کو اعلیٰ مقامی چاہیے

 

ہر مَلک صرف ایک بار آتا ہے درِ دربارِ پاک

کم سے کم اتنا تو آدابِ سلامی چاہیے

 

جرم رحمت بن کے چھا جائیں فضائے روح پر

عرصۂ محشر میں مجھ کو ایسا حامی چاہیے

 

ہر نفس پر مستقل چھلکے گا جامِ معرفت

چشمۂ کوثر کی اصلی تشنہ کامی چاہیے

 

میری کیا جرأت کہ بن جاؤں غلامِ مصطفی

مجھ کو تو ان کے غلاموں کی غلامی چاہیے

 

نعت گوئی کے لیے درکار ہے کچھ تو صبیحؔ

حسنِ حسّانؔ، صدقِ قدسیؔ جامِ جامیؔ چاہیے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ