اردوئے معلیٰ

حضور عالی مقام

حضور عالی مقام
پیغمبر خدائے رحیم، سرخیل مرسلاں
وہ رسول رحمت
یہ زہر آلود طنز اور ملحدانہ فقروں کو سن کے خاموش ہی رہے
اور زبان اقدس پہ آپ کی کوئی بھی نہ حرف ملال آیا
مگر یہ دل میں خیال آیا
خدائے برتر کہ جس کی خاطر تمام لوگوں سے دشمنی لی
خبر نہیں ہے کہ میری کس لغزش اور خطا پر
وہ مجھ سے ناراض ہو گیا ہے
نہ اب وہ راز و نیاز ہے اور نہ کوئی پیغام آ رہا ہے
اس انقطاعِ نزول وحی مبیں کے سب سوگوار لمحے
یہ عالم اضطراب کے بے قرار لمحے
یہ وحی کے انتظار میں دلفگار لمحے
حضور عالی مقام کو کس قدر پریشان کر رہے تھے
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ