خلق کے سرور شافع محشر صلی اللہ علیہ و سلم

 

خلق کے سرور شافع محشر صلی اللہ علیہ و سلم

مرسل دادر خاص پیمبر صلی اللہ علیہ و سلم

 

نورِ مجسم ،نیرِ اعظم سرور عالم مونس آدم

نوح کے ہمدم، خضر کے رہبر صلی اللہ علیہ و سلم

 

بحرِ سخاوت ،کانِ مروت ،آیہؔ رحمت، شافعِ اُمت

مالکِ جنت، قاسمِ کوثر صلی اللہ علیہ و سلم

 

رہبرِ موسیٰ، ہادیؔ عیسیٰ، تارکِ دنیا ، مالک عقبیٰ

ہاتھ کا تکیہ، خاک کا بستر صلی اللہ علیہ و سلم

 

سردِ خراماں، چہرہ گلستان، جبہ تاباں، مہر درخشاں

سنبل پیچاں، زلف معنبر صلی اللہ علیہ و سلم

 

قبلہ عالم، کعبہؔ اعظم، سب سے مقدم، راز سے محرم

جانِ مجسم، روحِ مصور صلی اللہ علیہ و سلم

 

مہر سے مملو ریشہ ریشہ، نعت امیر اپنا ہے پیشہ

ورد ہمیشہ دن بھر شب بھر صلی اللہ علیہ و سلم

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

خدا نے بھیجا ہے آپ تحفہ ، درود ان پر ، سلام ان پر
نطُق ہے ذکرِ رسولؐ رَبِّ اکرم کے لیے
کسی کو ان سا ملا دائمی شباب کہاں
یادِ نبی میں ہر دم رونا اچھا لگتا ہے
درِ رسول پہ میری یہ التجا پہنچے
زیرِ افلاک نطق آقا کا
حدودِ طائر سدرہ، حضور جانتے ہیں
ہماری جاں مدینہ ہے، ہمارا دل مدینہ ہے
خدا نے مغفرت کی شرط کیا راحت فزا رکھ دی
محمد مصطفیٰ یعنی خدا کی شان کے صدقے

اشتہارات